پاکستان میں کرکٹ کا کریز

پاکستان میں کرکٹ کا کریز

ملک کی تشکیل کے بعد سے کرکٹ پاکستان میں سب سے مشہور کھیل ہے۔ بین الاقوامی سطح پر پاکستانی ٹیم شاہینوں کے نام سے مشہور ہے۔ 1992 میں عمران خان کی کپتانی میں پاکستان نے ون ڈے ورلڈ کپ جیتا تھا اور وسیم اکرم کی کپتانی میں 1999 کے ورلڈ کپ میں فائنل کے لئے ایک بار اور کوالیفائی کیا تھا۔ پاکستان نے ایک چیمپیئن ٹرافی اور ایک ٹی 20 20 ورلڈ کپ بھی جیتا ہے۔ ٹیسٹ کرکٹ میں پاکستان کے پاس بھی زبردست ریکارڈ ہے۔ ماضی قریب میں وہ ٹیسٹ ٹیموں کی درجہ بندی میں پہلے نمبر پر تھے۔ پاکستان میں کرکٹ کا جنون دن بدن بڑھتا جارہا ہے۔

بین الاقوامی سطح پر مقبول کھلاڑی

عمران خان ، وسیم اکرم ، وقار یونس ، انضمام الحق ، سعید انور ، ظہیر عباس ، ماجد خان ، شعیب محمد ، شعیب اختر ، محمد یوسف ، راشد لطیف ، مشتاق احمد ، عبدالرزاق جیسے بہت سارے پاکستانی کھلاڑی پوری کرکٹ کی دنیا میں بہت مشہور ہیں۔ ، ثقلین مشتاق ، محمد عامر ، اظہر محمود ، جاوید میانداد ، رمیز راجہ ، اعجاز احمد ، سلیم ملک ، معین خان اور بہت سے۔

ٹیپ بال / ٹینس بال کرکٹ

ٹیپ بال کرکٹ پاکستان کی گلیوں ، گاؤں ، شہروں ، اسکولوں ، کالجوں اور یونیورسٹیوں میں بہت مشہور ہے۔ آپ کو کسی ایسے شخص کو تلاش کرنا بہت مشکل ہوگا جو پاکستان میں کبھی بھی ٹیپ بال کرکٹ نہیں کھیلتا تھا۔ بہت سے مشہور پاکستانی کھلاڑی بچپن میں یا اسکولوں میں ٹیپ بال کرکٹ کھیلتے تھے۔ مقامی قصبوں میں بہت سارے پاکستانی انٹرنیشنل کھلاڑی ٹیپ بال کرکٹ کھیل رہے تھے جیسے سعید انور ، معین خان ، آصف مجتبیٰ اور بہت سارے۔ ٹیپ بال کرکٹ کی جدت کا آغاز پاکستان میں 60 کی دہائی میں کراچی میں ہوا تھا۔ چونکہ کرکٹ کے آلات ، میدان اور پچ بہت مہنگے تھے اور سب کے لیے دستیاب نہیں ہوسکتے تھے لہذا بچے ٹینس کی گیند کو ٹیپ سے لپیٹ کر کرکٹ کھیلنا شروع کردیتے ہیں۔ بعد میں ٹیپ بال کرکٹ کو ہندوستانی ، بنگلہ دیش ، آسٹریلیا، نیوزی لینڈ ، جنوبی افریقہ اور ویسٹ انڈیز میں بھی مقبولیت ملی۔

پاکستان میں کرکٹ کا زوال

لاہور پاکستان میں سری لنکن ٹیم پر دہشت گردوں کے حملے کی وجہ سے تمام بین الاقوامی ٹیموں نے پاکستان میں کھیلنے سے انکار کردیا۔ اس حملے کے چند سال بعد پاکستانی کھلاڑی جیسے سلمان بٹ ، محمد عامر اور محمد آصف انگلینڈ میں اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل میں پھنس گئے۔ یہ پاکستانی کرکٹ کا سیاہ ترین دور تھا۔

مصباح الحق کی کپتانی میں

مصباح نے پاکستانی کرکٹ شائقین میں مسکراہٹ واپس لانے کے لئے اہم کردار ادا کیا۔ انہوں نے ٹھنڈے سر کے ساتھ ٹیم کو بہت اچھی طرح سے منظم کیا۔ ان کی کپتانی کے دوران 2016 میں پاکستان ٹیسٹ رینکنگ مٰیں ایک نمبر پر آ گی تھا۔

پاکستان سپر لیگ کا اضافہ

پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) ایک پیشہ ور T / 20 کرکٹ لیگ ہے ، جس کی تصدیق پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے ستمبر 2015 میں لاہور میں کی تھی۔ اس وقت اس میں 6 ٹیمیں شامل ہیں۔ لیگ ایک الگ ادارہ ہے جس میں 6 فرنچائزز ہیں اور ہر فرنچائز اس کے ملکیت اور اس کے سرمایہ کاروں کے زیر انتظام ہے۔ پی ایس ایل نے ملک کے دیہی علاقوں سے نئی صلاحیتوں کو حاصل کرنے کے لئے ایک اہم کردار ادا کیا۔ پی ایس ایل کی وجہ سے بہت سے نامعلوم کھلاڑیوں کو بے حد مقبولیت ملی اور بعد میں وہ پاکستان نیشنل ٹیم میں شامل ہوگئے اور اب وہ بین الاقوامی سطح پر ملک کے لئے اہم کردار ادا کررہے ہیں۔ پی ایس ایل کی وجہ سے ایسا لگتا ہے کہ ملک میں انٹرنیشنل کرکٹ کی واپسی ہوگی جو لاہور میں سری لنکن کرکٹ ٹیم پر حملے کی وجہ سے روک دی گئی تھی۔

ہندوستان کے خلاف چیمپیئن ٹرافی کا فائنل جیتنا

پاکستانی نے انگلینڈ میں چیمپیئن ٹرافی کا فائنل 2017 میں ہندوستان کے خلاف جیتا تھا ۔اس جیت کے بعد تمام موجودہ پاکستانی کھلاڑیوں کو پاکستانی عوام میں بے حد مقبولیت ملی۔ اب ایک بار پھر لوگوں کی کرکٹ کے لئے دلچسپی دن بدن بڑھتی جارہی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں