مقبول پاکستانی ٹی وی ڈرامے

مقبول پاکستانی ٹی وی ڈرامے
یہ ہے کچھ ٰبہت ہی مقبول پاکستانی ٹی وی ڈراموں کی فہرست۔

دھوپ کنارے

ڈرامہ کا مرکزی خیال کراچی پاکستان کے ایک اسپتال میں ڈاکٹروں پر مرکوز ہے ، اس میں اسپتال میں ڈاکٹروں کے معمولات اور گھر میں ان کی نجی زندگی کا احاطہ کیا گیا ہے۔ مرکزی کردار راحت کاظمی اور مرینہ خان تھے۔ یہ پاکستان کا سپر ہٹ ڈرامہ تھا۔

دوسری بیوی

یہ 2014 دسمبر کو اے آر وائی ڈیجیٹل پر نشر کیا گیا۔ اس کا مرکزی خیال بہت اچھا تھا کیونکہ یہ لوگوں کے گھروں اور دفاتر میں سماجی مسائل اور داخلی مسائل کو بیان کرتا ہے۔ مرکزی کردار فہد مصطفیٰ ، حریم فاروق اور مہا وارثی نے انجام دیئے۔ ڈرامہ ناظرین کے درمیان بہت مشہور تھا۔

عینک والا جن

اسے 1993 میں پی ٹی وی نے نشر کیا تھا پھر اس کی بے حد مقبولیت کی وجہ سے یہ دوبارہ دو بار نشر کیا گیا۔ یہ اپنی خیالی کہانی کی وجہ سے بچوں میں بہت مشہور تھا۔ آج کے وقت کی تین نسلوں میں بھی یہ ڈرامہ اتنا ہی مشہور تھا۔ ماضی میں بچوں ، ان کے والدین اور ان کے بزرگوں نے مل کر لطف اٹھایا۔

انگار وادی

یہ کشمیریوں میں بہت مشہور تھا کیونکہ اس میں کشمیر کے اصل مسئلے کا احاطہ کیا گیا ہے۔ اس کے مصنف ، ہدایت کار اور پروڈیوسر عظیم رؤف خالد مرحوم تھے جو اب ہمارے درمیان نہیں ہے ، وہ ایک سڑک حادثے میں فوت ہوگے تھے ۔ انہوں نے لاگ جیسے دوسرے مشہور ڈرامے بھی لکھے جن میں کشمیر کی صورتحال کو بیان اور نمایاں کیا گیا ہے۔

آ نسو

یہ مشہور ڈرامہ 2000 میں پاکستان ٹیلی وژن نیٹ ورک پر نشر کیا گیا تھا۔ آ نسو ڈرامہ عظیم مصنفہ حسینہ معین نے لکھا تھا۔ اس سیریل کی شوٹنگ پاکستان ، اسکاٹ لینڈ اور آئرلینڈ میں کی گئی تھی۔ یہ پاکستان کا پہلا سیریل تھا جو ڈیجیٹل کیمرے پر مکمل طور پر فلمایا گیا تھا۔ یہ ڈرامہ اپنی رومانوی کہانی اور خوبصورت مقامات کی وجہ سے نوجوانوں میں بہت مشہور تھا۔ اس ڈرامہ کے ٹائٹل سانگ ’’ تنہہا تنہا زندگی کے ‘‘ کو اس دور کی نوجوان نسل میں بے حد مقبولیت ملی۔

الفا براوو چارلی

یہ ایک ایکشن ایک سنسنی خیز فلم تھی جسے آئی ایس پی آر نے تیار کیا تھا اور اس کی ہدایتکاری شعیب منصور نے کی تھی۔ یہ مئی 1998 میں پی ٹی وی پر نشر کیا گیا تھا۔ اس ڈرامے میں رومانس اور کامیڈی شامل ہیں لیکن یہ دراصل پاک فوج کی آپریشنل سرگرمیوں کی عکاسی کررہی تھی۔ یہ ڈرامہ بالترتیب الفا ، براوو اور چارلی کے نام سے جانے جانے والے تین کرداروں فراز ، کاشف اور گلشیر پر مبنی تھا۔ وہ دوستی اور بہت دلچسپی رکھتے تھے کہ پاکستانی فوج میں اپنے کیریئر کا آغاز کریں۔

دھواں

یہ اصل میں پی ٹی وی پر 1994 میں نشر کیا گیا تھا ، یہ پانچ دوستوں کی کہانی پر مبنی تھا ، جو دہشت گردوں اور منشیات کے اسمگلروں کے خلاف لڑنے کے لئے چیلنج لیتے ہیں اور معاشرے میں مثبت تبدیلی لانا چاہتے ہیں۔
مرکزی کردار اشیر عظیم ، نبیل ، اصیل دین خان ، واجد علی شاہ اور زبیر خان تھے۔ دیگر کردار نزلی نصر ، نیئر اعجاز ، ریجا عامر ، رؤف بھٹی ، فیاض احمد پروانہ اور عذرا آفتاب تھے۔

وارث

اسے امجد اسلام امجد نے لکھا تھا اور اس کی ہدایتکاری غضنفر علی اور نصرت ٹھاکر نے کی تھی۔ یہ ڈرامہ 1979 میں نشر کیا گیا تھا اور 90 کی دہائی کے اوائل میں دوبارہ نشر کیا گیا تھا۔ اس میں پاکستان کے معاشرے اور سیاست میں جاگیرداری کو بیان کیا گیا ہے۔

خدا کی بستی

خدا کی بستی بہت پرانا سیریل ہے جو پاکستان ٹیلی وژن نے تیار کیا تھا اور پہلے یہ سن 1969 میں اور پھر 1974 میں نشر کیا گیا تھا۔ یہ ناول خدا کی بستی پر مبنی تھا۔ یہ سیریل پاکستان ٹیلی ویژن کی تاریخ کا ایک قدیم ترین اور عظیم ڈرامہ کہلاتا ہے۔

دام

اس کی ہدایتکاری مہرین جبار نے کی تھی اور عمیرہ احمد نے لکھا تھی ، مرکزی کردار عدیل حسین صنم بلوچ ، آمنہ شیخ اور صنم سعید تھے۔ یہ دوستی اور نقصان کی ایک عمدہ کہانی پر مبنی تھا۔

میری زات زارا بے نیشان

یہ ایک بار پھر عظیم مصنف عمیرہ احمد نے لکھا تھا اور اسکرین پر سامیہ ممتاز اور فیصل قریشی نے شاندار پرفارم کیا تھا۔ یہ پاکستانی ٹیلی وژن کی تاریخ کا ایک بہت بڑا سنگ میل تھا۔

پیارے افضل

یہ موجودہ دور کا سب سے مشہور ڈرامہ سیریل تھا۔ اسے خلیل الرحمن قمر نے تحریر کیا تھا اور ہدایتکار ندیم بیگ تھے۔ حمزہ علی عباسی ، عائزہ خان ، ثنا جاوید ، فردوس جمال ، سوہا علی ابڑو ، انوشے عباسی ، صبا حمید اور عمر نارو نے عمدہ پرفارم کیا۔ حمزہ علی عباسی کو اس ڈرامے کے بعد پورے ملک میں بے حد مقبولیت ملی۔

یہ پاکستان کے کچھ ہی ڈرامے ہیں۔ پاکستان کی ڈرامہ انڈسٹری اب بھی خوبصورت ڈرامے تیار کررہی ہے۔ جیسے موجودہ ایک ڈرامہ “میرے پاس تم ہو” بہہت مقبول ہوا.

اب یہاں بہت سارے نجی ٹی وی چینلز موجود ہیں ، نوجوان اداکارائیں اور اداکارائیں بھی بہت ہنرمند ہیں اور لوگوں کے لئے عمدہ سیرئلز تیار کررہی ہیں۔ پاکستان ڈرامہ انڈسٹری کے بہت سارے اداکاروں اور اداکاراؤں کو ان کی مقبولیت ، خوبصورتی اور اداکاری کی مہارت کی وجہ سے ہندوستانی فلم انڈسٹری (بالی ووڈ) میں موقع ملا۔ فواد خان ، عمران عباس اور عدنان صدیق جیسے پاکستانی ڈرامہ اداکاروں نے بالی ووڈ میں فلمیں کیں۔ ماہرہ خان اور صبا قمر جیسی اداکاراؤں اور کچھ اور نے بھی بھارتی فلمیں کیں۔