پاکستانی مزدور پردیس میں

یہ ہمارے ایک پٹھان بھائی ہیں جو سعودی عرب سے واپسی پر ایک بیلچہ ساتھ لے گئے ہیں۔

Pakistani Labor in Saudi Arabia
Pakistani Labor in Saudi Arabia

بہت سے کم ظرف لوگ اس تصویر کو تنقید کا نشانہ بنا رہے ہیں۔ میں نے پہلی مرتبہ اتنی زبردست تصویر دیکھی ہے جس میں کوئی مزدور اپنے روزی کے آلہ سے اتنی محبت کر رہا ہے۔اگر یہاں رہنے والے ڈاکٹرز انجنیئرز اور دیگر آفیسران اپنی استعمال کی چیزیں یا آلات جاتے وقت ساتھ لے جانا پسند کرتے ہیں تو مزدور کا بھی یہ حق ہے۔اس بھائی کو خاص طور پر سلام جو یقیناً یہاں 50 ڈگری سینٹی گریڈ پر اسی بیلچے کے ذریعہ رزقِ حلال کما رہا تھا اور اب پاکستان میں بھی اسی کے ذریعے رزقِ حلال کمانے کا ارادہ رکھتا ہے۔

یہاں ان لوگوں کے لیے بھی ایک خاص سبق ہے جو خاص کر خلیجی ممالک کے سخت موسم میں کٹھن ترین مزدوری کرتے ہیں اور جب پاکستان جاتے ہیں تو وہاں ان کا چال چلن ایسا ہوتا ہے کہ 18 گریڈ کے ملازمین ملازمتیں چھوڑ کر اور خاص کر کے اچھے خاصے پڑھنے والے نوجوان بھی اپنی تعلیم ادھوری چھوڑ کر بیرون ملک چلے آتے ہیں اور پھر یہاں آکر سب کی آنکھیں کھلی رہ جاتی ہیں۔انسان جس سطح پر بھی ہو فطرت کے قریب رہے اور مصنوعی پن سے دور ہو تو اس کی اپنی زندگی اور بہت سارے دیکھنے والوں کی زندگی بھی برباد ہونے سے بچ جاتی ہے۔

تحریر: تفہیم اقبال کیانی

اپنا تبصرہ بھیجیں